کلام بے لگام

PDFPrintEmail
با مقصد اور مزاحیہ شاعری
Description

کلام بے لگام
(ڈاکٹر منصور احمد باجوہ)

ڈاکٹر منصور احمد باجوہ کے مزاح کی بنیاد ایک دل درد مند ہے، جس کے لیے مزاح مقصد نہیں بلکہ ایک ذریعہ ہے۔ ان کے ہاں مزاح نگاروں کے محبوب اور مقبول مضامین مثلاً سیاسی طنز، و کرپشن، شوہر کی فریاد، بیگمات کے مزاج کی بو قلمونی اور شہر آشوب بھی پائے جاتے ہیں، لیکن انہوں نے انہی ’’چند کلیوں‘‘ پر قناعت نہیں کی بلکہ بعض بہت نوکیلی باتیں بڑے لطیف انداز میں کرنے کی کوشش بھی کی ہے۔ ان کا مزاح فلک شگاف قہقہوں کے بجائے گدگدی کو تحریک دیتا ہے اور یوں وہ لسانی توڑ پھوڑ اور پھکڑپن سے ایک سوچا سمجھا ہوا فاصلہ رکھتے ہوئے نظر آتے ہیں۔ ان کے ساتھ ساتھ ان کے مزاح میں ایک خود احتسابی کی لہر سی ہمہ دم رواں نظر آتی ہے جس نے اس شاعر ی کوSublime اور Ridiculous کا ایک دلچسپ امتزاج بنا دیا ہے۔ (امجد اسلام امجد)

ڈاکٹر منصور احمد باوجوہ ان شعرا میں شامل ہیں، جو انسانی دکھ کو قہقہوں میں اڑا دینا چاہتے ہیں۔ اپنے زخموں پر مسکرانا حوصلے کی بات ہے، مگر اس عمل کو تخلیقی رنگ عطا کرنا کوئی آسان کام نہیں۔ باجوہ صاحب نے اسی مشکل کام کو اپنے ذمے لے رکھا ہے، نثر میں بھی اور نظم میں بھی۔ ان کی یہ تحریریں آنسوئوں، مسکراہٹوں اور قہقہوں کے درمیان کی کوئی شے ہیں۔ جسے شاید نام نہ دیا جا سکتا ہو مگر اسے محسوس کیا جا سکتا ہے، انسان کے سانس لینے میں کچھ آسانی تو پیدا کی جا سکتی ہے۔ (شہزاد احمد)

Title Kalam e Bay Lagam
مصنف ڈاکٹر منصور احمد باجوہ
Last Updated : Dec 22, 2012